بام پر آتا ہے ہمارا چاند

سخی لکھنوی

بام پر آتا ہے ہمارا چاند

سخی لکھنوی

MORE BYسخی لکھنوی

    بام پر آتا ہے ہمارا چاند

    آسماں سے کرے کنارا چاند

    آپ ہی کی تلاش میں صاحب

    گردشیں کرتا ہے گوارا چاند

    خال اور رخ سے کس کو دوں نسبت

    ایسے تارے نہ ایسا پیارا چاند

    آگ بھڑکی جو آتشیں رخ کی

    ابھی اڑ جائے ہو کے پارا چاند

    ہونے تو دو مقابلہ ان سے

    غل کریں گے ملک کہ ہارا چاند

    چرخ سے ان کو تاکتا ہے سخیؔ

    جائے گا ایک روز مارا چاند

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY