حج کا سفر ہے اس میں کوئی ساتھ بھی تو ہو

عادل منصوری

حج کا سفر ہے اس میں کوئی ساتھ بھی تو ہو

عادل منصوری

MORE BYعادل منصوری

    حج کا سفر ہے اس میں کوئی ساتھ بھی تو ہو

    پردہ نشیں سے اپنی ملاقات بھی تو ہو

    کب سے ٹہل رہے ہیں گریبان کھول کر

    خالی گھٹا کو کیا کریں برسات بھی تو ہو

    دن ہے کہ ڈھل نہیں رہا اس ریگ زار میں

    منزل بھلے نہ آئے کہیں رات بھی تو ہو

    مجموعہ چھاپنے تو چلے ہو میاں مگر

    اشعار میں تمہارے کوئی بات بھی تو ہو

    مأخذ :
    • کتاب : Hashr ki subh darakhshaz ho (Pg. 271)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے