اک تشنہ لب نے بڑھ کے جو ساغر اٹھا لیا

فنا نظامی کانپوری

اک تشنہ لب نے بڑھ کے جو ساغر اٹھا لیا

فنا نظامی کانپوری

MORE BYفنا نظامی کانپوری

    اک تشنہ لب نے بڑھ کے جو ساغر اٹھا لیا

    ہر بو الہوس نے مے کدہ سر پر اٹھا لیا

    موجوں کے اتحاد کا عالم نہ پوچھئے

    قطرہ اٹھا اور اٹھ کے سمندر اٹھا لیا

    ترتیب دے رہا تھا میں فہرست دشمنان

    یاروں نے اتنی بات پہ خنجر اٹھا لیا

    میں ایسا بد نصیب کہ جس نے ازل کے روز

    پھینکا ہوا کسی کا مقدر اٹھا لیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY