تو ابھی رہ گزر میں ہے قید مقام سے گزر

علامہ اقبال

تو ابھی رہ گزر میں ہے قید مقام سے گزر

علامہ اقبال

MORE BY علامہ اقبال

    INTERESTING FACT

    ( بال جبریل)) لندن ميں لکھے گئے(

    تو ابھی رہ گزر میں ہے قید مقام سے گزر

    مصر و حجاز سے گزر پارس و شام سے گزر

    جس کا عمل ہے بے غرض اس کی جزا کچھ اور ہے

    حور و خیام سے گزر بادہ و جام سے گزر

    گرچہ ہے دل کشا بہت حسن فرنگ کی بہار

    طائرک بلند بام دانہ و دام سے گزر

    کوہ شگاف تیری ضرب تجھ سے کشاد شرق و غرب

    تیغ ہلال کی طرح عیش نیام سے گزر

    تیرا امام بے حضور تیری نماز بے سرور

    ایسی نماز سے گزر ایسے امام سے گزر

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جواد احمد

    جواد احمد

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تو ابھی رہ گزر میں ہے قید مقام سے گزر نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites