Editor ChoiceEDITORS’ CHOICE Popular ChoicePOPULAR CHOICE
MARSIYACATEGORY
(۱) تمامی حجت کی خاطر امام0
(۱۰) سنو یہ قصۂ جانکاہ کربلاے حسین0
(۱۱) دل تنگ ہو مدینے سے جب اٹھ چلا حسین0
(۱۲) نکلا ہے خیمہ شام کو شہ کا جلا ہوا0
(۱۳) وقت رخصت کے جو روتی تھی کھڑی زار بہن0
(۱۴) سجاد کو فلک نے کس کس طرح ستایا0
(۱۵) ہنگامہ چرخ تو نے جفا کا اٹھا دیا0
(۱۶) چاروں طرف ہے شور و فغاں وامصیبتا0
(۱۷) قاسم کی شادی اس دم رچائی0
(۱۸) نسیم غم سے ہے آتش بجاں امام حسین0
(۱۹) کہانی رات تھی آل نبی کی0
(۲) محرم کا نکلا ہے پھر کر ہلال0
(۲۰) کیا گردوں نے فتنے کو اشارہ0
(۲۱) نہ چھوڑی دشمنوں نے گھر میں شے دوست0
(۲۲) کرتا ہے یوں بیان سخن ران کربلا0
(۲۳) ابن علی سے سنا ہے یار و دشت بلا میں لڑائی ہوئی0
(۲۴) آئی ہے شب قتل حسین ابن علی کی0
(۲۵) چہلم ہے اے محباں اس شاہ دوسرا کا0
(۲۶) اس گل باغ امامت کے ہیں پھول0
(۲۷) پھر کیا یہ دھوم ہے کہ جہاں ہے سیہ تمام0
(۲۸) بھائی بھتیجے خویش و پسر یاور اور یار0
(۲۹) حیدر کا جگر پارہ وہ فاطمہ کا پیارا0
(۳) تحیات اے عزیزاں بابت آل پیمبرؐ ہے0
(۳۰) حسین ابن علی عالی نسب تھا0
(۳۱) فلک نے ہونا اکبر کا نہ چاہا0
(۳۲) دکھ سے ترے کیا کلام0
(۳۳) الوداع اے افتخار نوع انساں الوداع0
(۳۴) کیا نحس تھا دن روز سفر ہائے حسینا0
(۴) خاک تیرے فرق پر اے بے مروت آسماں0
(۵) فلک قتل سبط پیمبر ہے کل0
(۶) امت تھی نبیؐ کی کہ یہ کفار حسینا0
(۷) گردوں نے کس بلا کو یہ کر دیا اشارہ0
(۸) آیا محرم غمگیں رہا کر0
(۹) ایمان یہ کیسا تھا کیسی یہ مسلمانی0
seek-warrow-w
  • 1
arrow-eseek-e1 - 34 of 34 items