خلیلؔ الرحمن اعظمی

  • 1927-1978
  • علی گڑھ

جدید اردو تنقید کے بنیاد سازوں میں نمایاں

جدید اردو تنقید کے بنیاد سازوں میں نمایاں

Editor Choiceمنتخب Popular Choiceمقبول
غزلصنف
0 ا ,اس پر بھی دشمنوں کا کہیں سایہ پڑ گیا0
0 ا ,بنے_بنائے سے رستوں کا سلسلہ نکلا0
0 ا ,تو بھی اب چھوڑ دے ساتھ اے غم_دنیا میرا0
0 ا ,سوتے سوتے چونک پڑے ہم خواب میں ہم نے کیا دیکھا0
0 ا ,کوئی تم جیسا تھا ایسا ہی کوئی چہرا تھا0
0 ا ,مجھے عزیز ہے یہ نکہتوں کا گہوارا0
0 ا ,ہزار طرح سے گردش میں آفتاب رہا0
0 ا ,ہم بانسری پر موت کی گاتے رہے نغمہ ترا0
0 ا ,ہنگامۂ_حیات سے جاں_بر نہ ہو سکا0
0 ا ,وہ دن کب کے بیت گئے جب دل سپنوں سے بہلتا تھا0
0 ا ,وہ رنگ_رخ وہ آتش_خوں کون لے گیا0
0 ا ,یہ الگ بات کہ ہر سمت سے پتھر آیا0
0 ط ,پینا نہیں حرام، ہے زہر_وفا کی شرط1
0 م ,ہر خار_و_خس سے وضع نبھاتے رہے ہیں ہم0
0 ن ,جلتا نہیں اور جل رہا ہوں0
0 ن ,خود اپنا عکس ہوں کہ کسی کی صدا ہوں میں0
0 ن ,درمیاں خود اپنی ہستی ہو تو ہم بھی کیا کریں0
0 ن ,دیکھنے والا کوئی ملے تو دل کے داغ دکھاؤں0
0 ن ,شراب ڈھلتی ہے شیشے میں پھول کھلتے ہیں0
0 ن ,گلی گلی کی ٹھوکر کھائی کب سے خوار و پریشاں ہیں0
0 ن ,میں دیر سے دھوپ میں کھڑا ہوں0
0 ن ,نشاط_زندگی میں ڈوب کر آنسو نکلتے ہیں0
0 ن ,نشۂ_مے کے سوا کتنے نشے اور بھی ہیں0
0 ن ,ہم اہل_غم بھی رکھتے ہیں جادو_بیانیاں0
0 ن ,ہمیں بھی کیوں نہ ہو دعویٰ کہ ہم بھی یکتا ہیں0
0 ن ,وہ ہم_صفیر تھے تو قفس بھی چمن ہی تھا (ردیف .. ن)0
0 ہ ,الٰہی آ نہ پڑے پھر کوئی غم_تازہ0
0 و ,دل کی رہ جائے نہ دل میں یہ کہانی کہہ لو0
0 ے ,اپنا ہی شکوہ اپنا گلا ہے0
0 ی ,بس کہ پابندی_آئین_وفا ہم سے ہوئی0
0 ی ,پھر مری راہ میں کھڑی ہوگی0
0 ے ,تری صدا کا ہے صدیوں سے انتظار مجھے1
0 ے ,تمہارے پاس اک وحشی نے یہ پیغام بھیجا ہے0
0 ی ,چکھی ہے لمحے لمحے کی ہم نے مٹھاس بھی0
0 ی ,رخ پہ گرد_ملال تھی کیا تھی0
0 ے ,طرز جینے کے سکھاتی ہے مجھے0
0 ی ,کہاں کھو گئی روح کی روشنی0
0 ی ,کہاں کھو گئی روح کی روشنی0
0 ے ,کہوں یہ کیسے کہ جینے کا حوصلہ دیتے0
0 ے ,کیوں رو رو کر نین گنوائیں رونے سے کیا ہوتا ہے0
0 ے ,گھر میں بیٹھے سوچا کرتے ہم سے بڑھ کر کون دکھی ہے0
0 ی ,میں کہاں ہوں کچھ بتا دے زندگی اے زندگی!0
0 ے ,ہر ذرہ گلفشاں ہے نظر چور چور ہے0
0 ے ,ہر گھڑی عمر_فرومایہ کی قیمت مانگے0
0 ے ,ہر ہر سانس نئی خوشبو کی اک آہٹ سی پاتا ہے0
0 ے ,ہر ہر سانس نئی خوشبو کی اک آہٹ سی پاتا ہے0
0 ے ,وہ گھڑی وہ رت گئی وہ دن گئے موسم گئے0
seek-warrow-w
  • 1
arrow-eseek-e1 - 47 of 47 items