بادشاہوں کو سکھایا ہے قلندر ہونا

منور رانا

بادشاہوں کو سکھایا ہے قلندر ہونا

منور رانا

MORE BY منور رانا

    بادشاہوں کو سکھایا ہے قلندر ہونا

    آپ آسان سمجھتے ہیں منور ہونا

    ایک آنسو بھی حکومت کے لیے خطرہ ہے

    تم نے دیکھا نہیں آنکھوں کا سمندر ہونا

    صرف بچوں کی محبت نے قدم روک لیے

    ورنہ آسان تھا میرے لیے بے گھر ہونا

    ہم کو معلوم ہے شہرت کی بلندی ہم نے

    قبر کی مٹی کا دیکھا ہے برابر ہونا

    اس کو قسمت کی خرابی ہی کہا جائے گا

    آپ کا شہر میں آنا مرا باہر ہونا

    سوچتا ہوں تو کہانی کی طرح لگتا ہے

    راستے سے مرا تکنا ترا چھت پر ہونا

    مجھ کو قسمت ہی پہنچنے نہیں دیتی ورنہ

    ایک اعزاز ہے اس در کا گداگر ہونا

    صرف تاریخ بتانے کے لیے زندہ ہوں

    اب مرا گھر میں بھی ہونا ہے کلنڈر ہونا

    مآخذ:

    • Book : Sukhan Sarai (Pg. 18)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY