بہتا آنسو ایک جھلک میں کتنے روپ دکھائے گا

احمد مشتاق

بہتا آنسو ایک جھلک میں کتنے روپ دکھائے گا

احمد مشتاق

MORE BYاحمد مشتاق

    بہتا آنسو ایک جھلک میں کتنے روپ دکھائے گا

    آنکھ سے ہو کر گال بھگو کر مٹی میں مل جائے گا

    بھولنے والے! وقت کے ایوانوں میں کون ٹھہرتا ہے

    بیتی شام کے دروازے پر کس کو بلانے آئے گا

    آنکھ مچولی کھیل رہا ہے اک بدلی سے اک تارا

    پھر بدلی کی یورش ہوگی پھر تارا چھپ جائے گا

    اندھیارے کے گھور نگر میں ایک کرن آباد ہوئی

    کس کو خبر ہے پہلا جھونکا کتنے پھول کھلائے گا

    پھر اک لمحہ آن رکا ہے وقت کے سونے صحرا میں

    پل بھر اپنی چھب دکھلا کر لمحوں میں مل جائے گا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    بہتا آنسو ایک جھلک میں کتنے روپ دکھائے گا نعمان شوق

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے