بے کسی پر ظلم لا محدود ہے

اقبال کیفی

بے کسی پر ظلم لا محدود ہے

اقبال کیفی

MORE BYاقبال کیفی

    بے کسی پر ظلم لا محدود ہے

    مطلع انصاف ابرآلود ہے

    وقت کی قیمت ادا کرنے کے بعد

    عہد کا فرعون پھر مسجود ہے

    ہر طرف زر کی پرستش ہے یہاں

    سنتے آئے تھے خدا معبود ہے

    چار سو ہے آتش و آہن کا کھیل

    اور خلا میں شعلہ و بارود ہے

    تابش علم و ہنر ہے بے ثمر

    کاوش حسن عمل بے سود ہے

    امن کیفیؔ ہو نہیں سکتا کبھی

    جب تلک ظلم و ستم موجود ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY