جب عشق سکھاتا ہے آداب خود آگاہی

علامہ اقبال

جب عشق سکھاتا ہے آداب خود آگاہی

علامہ اقبال

MORE BYعلامہ اقبال

    دلچسپ معلومات

    ( بال جبریل)

    جب عشق سکھاتا ہے آداب خود آگاہی

    کھلتے ہیں غلاموں پر اسرار شہنشاہی

    عطارؔ ہو رومیؔ ہو رازیؔ ہو غزالیؔ ہو

    کچھ ہاتھ نہیں آتا بے آہ سحرگاہی

    نومید نہ ہو ان سے اے رہبر فرزانہ

    کم کوش تو ہیں لیکن بے ذوق نہیں راہی

    اے طائر لاہوتی اس رزق سے موت اچھی

    جس رزق سے آتی ہو پرواز میں کوتاہی

    دارا و سکندر سے وہ مرد فقیر اولیٰ

    ہو جس کی فقیری میں بوئے اسد اللہٰی

    آئین جواں مرداں حق گوئی و بیباکی

    اللہ کے شیروں کو آتی نہیں روباہی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    مأخذ :
    • کتاب : کلیات اقبال (Pg. 348)
    • Author : علامہ اقبال
    • مطبع : ایجوکیشنل پبلشنگ ہاؤس،دہلی (2014)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے