aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کریں ہم کس کی پوجا اور چڑھائیں کس کو چندن ہم

فیض دکنی

کریں ہم کس کی پوجا اور چڑھائیں کس کو چندن ہم

فیض دکنی

MORE BYفیض دکنی

    کریں ہم کس کی پوجا اور چڑھائیں کس کو چندن ہم

    صنم ہم دیر ہم بت خانہ ہم بت ہم برہمن ہم

    در و دیوار ہی نظروں میں اپنی آئنہ خانہ

    کیا کرتی ہیں گھر بیٹھی ہی اپنا آپ درشن ہم

    محبت ہے تو اپنے سے عداوت ہے تو اپنے سے

    ہیں آپ ہی دوست اپنے ہم ہیں آپ ہی اپنے دشمن ہم

    کب اٹھتی ہیں اٹھائے سے کسی شیخ و برہمن کے

    در دل پر ہی اپنے مار کر بیٹھے ہیں آسن ہم

    جسے غیب آپ سمجھے ہیں شہادت جس کو جانے ہیں

    بنا رکھی ہیں اپنی دل لگی کی یہ گھر آنگن ہم

    ہدایت ہم سے ہی پیدا ضلالت ہم پہ ہی شیدا

    کبھی ہیں رہنما اپنے کبھی ہیں اپنے رہزن ہم

    نہ قیل و قال سے مطلب نہ شغل اشغال سے مطلب

    مراقب اپنے رہتے ہیں کا کر اپنی گردن ہم

    رہا کرتی ہیں پہروں محو نظارہ میں ہم اپنے

    سراپا ہو رہے ہیں اب تو اپنے آپ درپن ہم

    ہوا اے فیضؔ معلوم ایک مدت میں ہمیں تھی وہ

    جپا کرتے تھے جس کے نام کی دن رات سمرن ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے