Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ہر ایک چیز میسر سوائے بوسہ ہے

سید کاشف رضا

ہر ایک چیز میسر سوائے بوسہ ہے

سید کاشف رضا

MORE BYسید کاشف رضا

    ہر ایک چیز میسر سوائے بوسہ ہے

    اور اپنے غم کا سبب التوائے بوسہ ہے

    بھلے تو لگتے ہیں انکار بوسہ پر بھی یہ ہونٹ

    کبھی تو یہ کہو ''یہ لب برائے بوسہ'' ہے

    مرے قریب سے ہونٹوں کو مت گزار اتنا

    کہ چل رہی مرے سر میں ہوائے بوسہ ہے

    چھپایا کر نہیں ہونٹوں کو مسکراتے ہوئے

    یہ جائے شرم نہیں ہے یہ جائے بوسہ ہے

    لب خموش پہ بھی ہے مرے ہی کام کا حرف

    مری مراد یہ بھی ہے جو پائے بوسہ ہے

    سمجھ میں کچھ نہیں آتا کہ بولتی ہو کیا

    لبوں پہ کھیلتی پھرتی ندائے بوسہ ہے

    یہی نہ چھوڑ کے جا تشنہ کام ہونٹوں پر

    کہ یہ تو بوسۂ سہو قضائے بوسہ ہے

    تمہاری خوش دہنی سے ہے اصل میں سروکار

    یہ لب کا بوسہ تو بس ابتدائے بوسہ ہے

    بس ایک بوسۂ صبح اور ایک بوسۂ شام!

    فقیر بوسہ ہوں اور التجائے بوسہ ہے

    لبان بوسہ چشیدہ بھی خوب ہیں لیکن

    نگہ میں ایک بت ناخدائے بوسہ ہے

    موضوعات

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے