Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

بہت کٹھن ہے بکھرنے کا حوصلہ رکھنا

عرفان جعفری

بہت کٹھن ہے بکھرنے کا حوصلہ رکھنا

عرفان جعفری

MORE BYعرفان جعفری

    بہت کٹھن ہے بکھرنے کا حوصلہ رکھنا

    سبب تمہیں ہو مگر تم سے کیا گلہ رکھنا

    نہ جانے کون سے موسم سے سابقہ پڑ جائے

    ہمارے حق میں دعاؤں کا سلسلہ رکھنا

    خدا کرے کہ اسے اپنی بات یاد رہے

    گیا ہے کہہ کے مجھے اپنا در کھلا رکھنا

    مرے بغیر رتوں کو وہ کیسے کاٹے گا

    اسی خیال میں بس خود کو مبتلا رکھنا

    یہ زندگی بڑی مشکل سے رام ہوتی ہے

    کبھی ملے تو محبت سے رابطہ رکھنا

    ترا سلوک ہو ایسا تو کیسے ممکن ہے

    شہد زباں پہ تو لہجے میں شکریہ رکھنا

    میں بے نیاز مجھے کیا غرض نتیجے سے

    مرا تو کام ہے بس اپنا مدعا رکھنا

    جہاں شکست ہو اور واپسی کی خواہش بھی

    اس ایک پل کو مرے نام سے بچا رکھنا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے