Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

بلند برق کے آگے بھی حوصلہ رکھنا

مختار احمد کوثر

بلند برق کے آگے بھی حوصلہ رکھنا

مختار احمد کوثر

MORE BYمختار احمد کوثر

    بلند برق کے آگے بھی حوصلہ رکھنا

    جلے جو ایک نشیمن تو دوسرا رکھنا

    جو آزمانا ہو مجھ کو تو پھر مرے آگے

    خم و صراحی نہیں سارا مے کدہ رکھنا

    وہ سچ کی کھوج میں کس کس کا دیکھتا چہرہ

    جو خود ہی بھول گیا ساتھ آئنہ رکھنا

    کہیں اگا ہو وہ گلشن ہو یا کہ صحرا ہو

    ہمیشہ پھول کی خوشبو سے واسطہ رکھنا

    دلوں کے بیچ میں دیوار تاننے والو

    کھلی ہوا میں نکلنے کا راستہ رکھنا

    وہ اجنبی کہ شناسا ہو یہ خیال رہے

    ملو جو اس سے تو تھوڑا سا فاصلہ رکھنا

    صعوبتوں سے جو دل ٹوٹنے لگے کوثرؔ

    نظر کے سامنے تصویر کربلا رکھنا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے