شہر سنسان ہے کدھر جائیں

ناصر کاظمی

شہر سنسان ہے کدھر جائیں

ناصر کاظمی

MORE BY ناصر کاظمی

    شہر سنسان ہے کدھر جائیں

    خاک ہو کر کہیں بکھر جائیں

    رات کتنی گزر گئی لیکن

    اتنی ہمت نہیں کہ گھر جائیں

    یوں ترے دھیان سے لرزتا ہوں

    جیسے پتے ہوا سے ڈر جائیں

    ان اجالوں کی دھن میں پھرتا ہوں

    چھب دکھاتے ہی جو گزر جائیں

    رین اندھیری ہے اور کنارہ دور

    چاند نکلے تو پار اتر جائیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عابدہ پروین

    عابدہ پروین

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    شہر سنسان ہے کدھر جائیں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY