aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

تو سخنور ہے تو کر حق سے وفا حرف بہ حرف

صدا انبالوی

تو سخنور ہے تو کر حق سے وفا حرف بہ حرف

صدا انبالوی

MORE BYصدا انبالوی

    تو سخنور ہے تو کر حق سے وفا حرف بہ حرف

    فرض شاعر کا صداقت سے نبھا حرف بہ حرف

    ڈھونڈ افلاک نئے اور زمینیں بھی نئی

    ہو غزل کا تری ہر شعر نیا حرف بہ حرف

    نقش کو لفظ میں منظر کو عبارت میں بدل

    پھر جو دیکھا تری آنکھوں نے دکھا حرف بہ حرف

    لیلیٰ مجنوں کے فسانے کے بہانے ہی سہی

    اپنی روداد زمانے کو سنا حرف بہ حرف

    رنگ و الفاظ میں جرأت کہاں جو کھینچیں صنم

    ہو بہ ہو تیری چھٹا تیری ادا حرف بہ حرف

    شعر میں یوں ہی نہیں رنگ تغزل آیا

    خون دل سے اسے سینچا ہے گیا حرف بہ حرف

    ہم نہیں وہ جو ترنم کو سخن کہتے ہیں

    ہم نے ہر شعر میں معنی ہے بھرا حرف بہ حرف

    شیخ اچھا ہوا تو حافظ قرآن ہوا

    اب اک آیت پہ عمل کر کے دکھا حرف بہ حرف

    کر بلند اپنی صدا حق میں غریبوں کے صداؔ

    اور اتر اپنے تخلص پہ کھرا حرف بہ حرف

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے