aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

وہ نکہت گیسو پھر اے ہم نفساں آئی

روش صدیقی

وہ نکہت گیسو پھر اے ہم نفساں آئی

روش صدیقی

MORE BYروش صدیقی

    وہ نکہت گیسو پھر اے ہم نفساں آئی

    اب دم میں دم آیا ہے اب جان میں جاں آئی

    ہر طنز پہ رندوں نے سر اپنا جھکایا ہے

    اس پر بھی نہ واعظ کو تہذیب مغاں آئی

    جب بھی یہ خیال آیا کیا دیر ہے کیا کعبہ

    ناقوس برہمن سے آواز اذاں آئی

    اس شوخ کی باتوں کو دشوار ہے دہرانا

    جب باد صبا آئی آشفتہ بیاں آئی

    اردو جسے کہتے ہیں تہذیب کا چشمہ ہے

    وہ شخص مہذب ہے جس کو یہ زباں آئی

    یہ خندۂ گل کیا ہے ہم نے تو یہ دیکھا ہے

    کلیوں کے تبسم میں چھپ چھپ کے فغاں آئی

    آباد خیال اس کا شاداں رہے یاد اس کی

    اک دشمن دل آیا اک آفت جاں آئی

    اشعار روشؔ سن کر توصیف و ستائش کو

    سعدیؔ کا بیاں آیا حافظؔ کی زباں آئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے