یارب غم ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا

چراغ حسن حسرت

یارب غم ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا

چراغ حسن حسرت

MORE BY چراغ حسن حسرت

    یارب غم ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا

    جو ہاتھ جگر پر ہے وہ دست دعا ہوتا

    اک عشق کا غم آفت اور اس پہ یہ دل آفت

    یا غم نہ دیا ہوتا یا دل نہ دیا ہوتا

    ناکام تمنا دل اس سوچ میں رہتا ہے

    یوں ہوتا تو کیا ہوتا یوں ہوتا تو کیا ہوتا

    امید تو بندھ جاتی تسکین تو ہو جاتی

    وعدہ نہ وفا کرتے وعدہ تو کیا ہوتا

    غیروں سے کہا تم نے غیروں سے سنا تم نے

    کچھ ہم سے کہا ہوتا کچھ ہم سے سنا ہوتا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    فریدہ خانم

    فریدہ خانم

    مآخذ:

    • Book : Jadeed Shora-e-Urdu (Pg. 628)
    • Author : Dr. Abdul Wahid
    • مطبع : Feroz sons Printers Publishers and Stationers

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY