aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

یوں تو ہنستے ہوئے لڑکوں کو بھی غم ہوتا ہے

والی آسی

یوں تو ہنستے ہوئے لڑکوں کو بھی غم ہوتا ہے

والی آسی

MORE BYوالی آسی

    یوں تو ہنستے ہوئے لڑکوں کو بھی غم ہوتا ہے

    کچی عمروں میں مگر تجربہ کم ہوتا ہے

    سگرٹیں چائے دھواں رات گئے تک بحثیں

    اور کوئی پھول سا آنچل کہیں نم ہوتا ہے

    اس طرح روز ہم اک خط اسے لکھ دیتے ہیں

    کہ نہ کاغذ نہ سیاہی نہ قلم ہوتا ہے

    ایک ایک لفظ تمہارا تمہیں معلوم نہیں

    وقت کے کھردرے کاغذ پہ رقم ہوتا ہے

    وقت ہر ظلم تمہارا تمہیں لوٹا دے گا

    وقت کے پاس کہاں رحم و کرم ہوتا ہے

    فاصلہ عزت و رسوائی میں والیؔ صاحب

    سنتے آئے ہیں کہ بس چند قدم ہوتا ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Mujalla Dastavez (Pg. 106)
    • Author : Aziz Nabeel
    • مطبع : Edarah Dastavez (2010)
    • اشاعت : 2010

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے