لکھنؤ کے شاعر اور ادیب

کل: 415

اٹھارہویں صدی کے بڑے شاعروں میں شامل، میرتقی میر کے ہم عصر

مشہور و معروف ناول نگار اور شہر لکھنؤ سے نکلنے والےمشہور ہفت روزہ اودھ پنچ کے مدیر

شاعر،خدنگ نظر،زمانہ کانپوراور ادیب جیسے رسائل کے مدیر

شاعر،ںثار

مابعد کلاسکی شاعر،اپنے ضرب المثل اشعار کے لیے مشہور

معروف شاعر، مشاعروں میں بے انتہا مقبول

بھگوت گیتا کا اردو میں منظوم ترجمہ کرنے کے لئے مشہور

وہ اپنے زمانے کے مشہور وکیل تھے اور ہندوستان کی تحریک آزادی میں انہوں نے اہم کردار ادا کیا تھا۔ وہ انڈین نیشنل کانگریس کے ایک بڑے لیڈر بھی تھے۔[8] جواہر لال نہرو ان ہی کے فرزند تھے۔

معروف ترقی پسند شاعر / یوپی کے شہر بہرائچ میں پیدائش/ فراق کے شاگرد

معروف اسکالر اورماہر تعلیم۔جامعہ ملیہ اسلامیہ کے وائس چانسلر ۔

ممتاز نقاد اورفکشن نویس۔ اپنی تنقیدی کتاب ’اردو ناول کی تنقیدی تاریخ‘ اور ناول ’ شام اودھ‘ کے لیے معروف۔ انگریزی کے استاد رہے۔

شہرہ آفاق عشقیہ مثنوی "زہر عشق " کے لیے معروف

دبستان لکھنؤ کے ممتاز کلاسیکی شاعر، اودھ کے آخری نواب واجد علی شاہ کے استاد

اودھ کے نواب ،آصف الدولہ کے ماموں زاد بھائی،کئی شاعروں کے سرپرست

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے