aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

نذر احمد فرازؔ

ٹی این راز

نذر احمد فرازؔ

ٹی این راز

MORE BYٹی این راز

    پھر رسم زمانے کی نبھانے کے لئے آ

    مل کر کے گلے عید منانے کے لئے آ

    سر تال نئے پھر سے ملانے کے لئے آ

    ڈھولک پہ ذرا تھاپ لگانے کے لئے آ

    جو زخم جدائی کے دیئے ان پہ مری جاں

    سستا سا ہی مرہم تو لگانے کے لئے آ

    پلوں نے ترے ناک میں دم میری کیا ہے

    بوتل کا سہی دودھ پلانے کے لئے آ

    بن تیرے کہاں ختم ہو رشوت کی کمائی

    گل چھرے مرے ساتھ اڑانے کے لئے آ

    بکھری ہے تری زلف سی ہر چیز ہی گھر پر

    اک اک کو ٹھکانے سے سجانے کے لئے آ

    سیدھا نہ کہیں کر دے ہمیں بے جا اکڑ یہ

    خود جھکنے کو اور مجھ کو جھکانے کے لئے آ

    تو نے بھی مرے ہجر میں جو شعر کہے ہیں

    بے خوف پھٹے سر میں سنانے کے لئے آ

    مقطع ہے تو ہی رازؔ کی اس تازہ غزل کا

    اس بار جو آئے تو نہ جانے کے لئے آ

    مأخذ:

    Ghalib aur Durgat (3rt Edition) (Pg. 185)

    • مصنف: T.N. Raz
      • اشاعت: 2016
      • ناشر: Arshia Publications
      • سن اشاعت: 2016

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے