محبت کی انتہا پر

شارق کیفی

محبت کی انتہا پر

شارق کیفی

MORE BY شارق کیفی

    پاپا

    تم مر جاؤ نہ پاپا

    میں تم سے نفرت کرتا ہوں

    کش تم لیتے ہو کھانسی مجھ کو آتی ہے

    دل کے دورے تمہیں نہیں

    مجھ کو پڑتے ہیں

    آخر کب تک

    رات میں اٹھ کر

    لائٹ جلا کر

    دیکھوں گا میں سانس تمہاری

    کب تک میری ٹیچر

    مجھ کو ٹوکے گی

    گم صم رہنے پر

    کیسے بتلاؤں

    میں کتنا ڈر جاتا ہوں

    جب میری رکشا مڑتی ہے

    گھر والے رستے پر

    آج بھی کم بے چین نہیں میں

    موڑ وہ بس آنے والا ہے

    چین پڑ گیا

    آج بھی میرے گھر کے آگے بھیڑ نہیں ہے

    یعنی

    آج بھی شاید سب کچھ ٹھیک ہے گھر میں

    یعنی تم زندہ ہو پاپا

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY