aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

سموسہ

MORE BYکلیم چغتائی

    چوری چھپے کھاتے ہیں کچھ انسان سموسہ

    ہیں وہ بھی جو کھائیں علی الاعلان سموسہ

    ہو ناشتے میں لنچ میں پھر ہو یہ ڈنر میں

    بس ان کا چلے تو ملے ہر آن سموسہ

    پنواڑی نے کاٹا جو مثلث کی طرح پان

    بولے کہ یہ لگتا ہے مجھے پان سموسہ

    ملہار وہ گائیں یا کوئی راگنی چھیڑیں

    ہر بار لگاتے ہیں وہی تان سموسہ

    یوں تو وہ سخی دل کے ہیں لیکن جو ہو ممکن

    ہر ایک گداگر کو کریں دان سموسہ

    دفتر میں جو ظہرانہ دیا جاتا ہے سب کو

    وہ چاہتے ہیں روز ملے نان سموسہ

    غم کا کوئی مارا گو ہو کتنا ہی فسردہ

    لاتا ہے لبوں پر نئی مسکان سموسہ

    کھائیں جو سموسہ تو ہے لازم رہیں محتاط

    یہ ہو نہ شکم میں لگے پیکان سموسہ

    ناقص کسی بھی شے سے بنا کھائیں نہ ورنہ

    کر دے گا ضرور آپ کو ہلکان سموسہ

    یوں تو ہے یہ کم قیمت و خوش ذائقہ خوراک

    اس نے مجھے دلوایا ہے دیوان سموسہ

    اشعار خداداد ہیں یہ شکر ہے رب کا

    یکجا ہوئے ہیں سب یہ بعنوان سموسہ

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے