Ravish Siddiqi's Photo'

روش صدیقی

1911 - 1971 | شاہ جہاں پور, ہندوستان

نیم کلاسیکی انداز کے ممتاز مقبول عام شاعر

روش صدیقی ۱۰ جولائی ۱۹۰۹کو جوالاپور(ضلع سہارنپور) میں پیدا ہوئے ۔ ان کا اصل نام شاہد عزیز تھا ۔ ان کے والد مولوی طفیل احمد بھی شاعر تھے ۔ روش نے گھر کے علمی اور مذہبی ماحول میں تربیت پائی ۔ عربی فارسی کی تعلیم حاصل کی ۔ بعد میں ہندی اور سنسکرت سے بھی واقفیت حاصل کی ۔ ان کے کلام میں تصوف اور ویدانت کے اثرات زبانوں سے اسی واقفیت کا نتیجہ ہیں ۔
روش تقسیم ملک تک جوالاپور میں ہی رہے ۔ آزادی کے وقت بھڑک اٹھنے والے فسادات میں جوالاپور بھی جل اٹھا اور روش جوالاپور سے مرادآباد منتقل ہوگئے ۔ ۱۹۵۵ میں مرادآباد سے دہلی آئے اور آل انڈیا ریڈیو میں ملازمت اختیار کی ۔انہوں نے ۱۹۵۹ میں بیلجیم میں ایک ادبی کانفرنس میں ہندوستان کی نمائندگی بھی کی ۔ روش مولانا آزاد کے بہت قریبی دوستوں میں سے تھے ۔
روش کا کلام ایک ساتھ کئی رنگوں کا آمیزہ ہے انہوں نے اختر شیرانی کے طرز پر رومانی نظمیں بھی کہیں ساتھ ہی ملی ، ملکی اور سیاسی مسائل کو بھی اپنی شاعری کا حصہ بنایا ۔ گاندھی جی پر ان کی  نظم بہت مشہور ہوئی ۔ روش کی غزلوں میں ایک خاص کلاسیکی رچاؤ پایا جاتا ہے ۔ ان کی غزلوں کا مجموعہ ’ محراب غزل‘ اپنی اشاعت کے وقت بہت مقبول ہوا ۔
۱۹۷۱ کو ان کا انتقال ہوا ۔

 

Added to your favorites

Removed form your favorites