بس ایک ماہ جنوں خیز کی ضیا کے سوا

منیر نیازی

بس ایک ماہ جنوں خیز کی ضیا کے سوا

منیر نیازی

MORE BY منیر نیازی

    بس ایک ماہ جنوں خیز کی ضیا کے سوا

    نگر میں کچھ نہیں باقی رہا ہوا کے سوا

    ہے ایک اور بھی صورت کہیں مری ہی طرح

    اک اور شہر بھی ہے قریۂ صدا کے سوا

    اک اور سمت بھی ہے اس سے جا کے ملنے کی

    نشان اور بھی ہے ایک نشان پا کے سوا

    زوال عصر ہے کوفے میں اور گداگر ہیں

    کھلا نہیں کوئی در باب التجا کے سوا

    مکان زر لب گویا حد سپہر و زمیں

    دکھائی دیتا ہے سب کچھ یہاں خدا کے سوا

    مری ہی خواہشیں باعث ہیں میرے غم کی منیرؔ

    عذاب مجھ پہ نہیں حرف مدعا کے سوا

    مآخذ:

    • Book: kulliyat-e-muniir niyaazii (Pg. 335)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY