بھڑکا رہے ہیں آگ لب نغمہ گر سے ہم

ساحر لدھیانوی

بھڑکا رہے ہیں آگ لب نغمہ گر سے ہم

ساحر لدھیانوی

MORE BY ساحر لدھیانوی

    بھڑکا رہے ہیں آگ لب نغمہ گر سے ہم

    خاموش کیا رہیں گے زمانے کے ڈر سے ہم

    کچھ اور بڑھ گئے جو اندھیرے تو کیا ہوا

    مایوس تو نہیں ہیں طلوع سحر سے ہم

    لے دے کے اپنے پاس فقط اک نظر تو ہے

    کیوں دیکھیں زندگی کو کسی کی نظر سے ہم

    مانا کہ اس زمیں کو نہ گلزار کر سکے

    کچھ خار کم تو کر گئے گزرے جدھر سے ہم

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    بھڑکا رہے ہیں آگ لب نغمہ گر سے ہم نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY