دیکھا تو تھا یوں ہی کسی غفلت شعار نے

ساحر لدھیانوی

دیکھا تو تھا یوں ہی کسی غفلت شعار نے

ساحر لدھیانوی

MORE BY ساحر لدھیانوی

    دیکھا تو تھا یوں ہی کسی غفلت شعار نے

    دیوانہ کر دیا دل بے اختیار نے

    اے آرزو کے دھندلے خرابو جواب دو

    پھر کس کی یاد آئی تھی مجھ کو پکارنے

    تجھ کو خبر نہیں مگر اک سادہ لوح کو

    برباد کر دیا ترے دو دن کے پیار نے

    میں اور تم سے ترک محبت کی آرزو

    دیوانہ کر دیا ہے غم روزگار نے

    اب اے دل تباہ ترا کیا خیال ہے

    ہم تو چلے تھے کاکل گیتی سنوارنے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دیکھا تو تھا یوں ہی کسی غفلت شعار نے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY