فیصلہ کیا ہو جان بسمل کا

زیبا

فیصلہ کیا ہو جان بسمل کا

زیبا

MORE BYزیبا

    فیصلہ کیا ہو جان بسمل کا

    موت رخ دیکھتی ہے قاتل کا

    دل لگی ہے سنبھالنا دل کا

    ناصحا کام ہے یہ مشکل کا

    موت بھی کانپ کانپ اٹھتی ہے

    نام سن سن کے میرے قاتل کا

    مل کے تلووں سے ہنس کے کہتے ہیں

    تھا زمانہ میں شور اسی دل کا

    حسرتیں اس پتے پر آتی ہیں

    داغ دل ہے چراغ منزل کا

    کیا قرینے سے گل ہیں گلشن میں

    رنگ اڑایا کسی کے محفل کا

    آپ کو کھو کے تم کو ڈھونڈھ لیا

    حوصلہ تھا یہ میرے ہی دل کا

    بے نقاب اس نے کس کو دیکھ لیا

    رنگ فق ہے جو ماہ کامل کا

    ہنس کے پھولوں کو وہ کریں گے سبک

    رنگ اڑائیں گے ہم عنادل کا

    ذکر غم بزم یار میں زیباؔ

    رنگ بھی دیکھتے ہو محفل کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY