aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

عشق پھر عشق ہے آشفتہ سری مانگے ہے

عنوان چشتی

عشق پھر عشق ہے آشفتہ سری مانگے ہے

عنوان چشتی

MORE BYعنوان چشتی

    عشق پھر عشق ہے آشفتہ سری مانگے ہے

    ہوش کے دور میں بھی جامہ دری مانگے ہے

    ہائے آغاز محبت میں وہ خوابوں کے طلسم

    زندگی پھر وہی آئینہ گری مانگے ہے

    دل جلانے پہ بہت طنز نہ کر اے ناداں

    شب گیسو بھی جمال سحری مانگے ہے

    میں وہ آسودۂ جلوہ ہوں کہ تیری خاطر

    ہر کوئی مجھ سے مری خوش نظری مانگے ہے

    تیری مہکی ہوئی زلفوں سے بہ انداز حسیں

    جانے کیا چیز نسیم سحری مانگے ہے

    آپ چاہیں تو تصور بھی مجسم ہو جائے

    ذوق آذر تو نئی جلوہ گری مانگے ہے

    حسن ہی تو نہیں بیتاب نمائش عنواںؔ

    عشق بھی آج نئی جلوہ گری مانگے ہے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    عشق پھر عشق ہے آشفتہ سری مانگے ہے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے