جو دل نے کہی لب پہ کہاں آئی ہے دیکھو

زہرا نگاہ

جو دل نے کہی لب پہ کہاں آئی ہے دیکھو

زہرا نگاہ

MORE BYزہرا نگاہ

    جو دل نے کہی لب پہ کہاں آئی ہے دیکھو

    اب محفل یاراں میں بھی تنہائی ہے دیکھو

    پھولوں سے ہوا بھی کبھی گھبرائی ہے دیکھو

    غنچوں سے بھی شبنم کبھی کترائی ہے دیکھو

    اب ذوق طلب وجہ جنوں ٹھہر گیا ہے

    اور عرض وفا باعث رسوائی ہے دیکھو

    غم اپنے ہی اشکوں کا خریدا ہوا ہے

    دل اپنی ہی حالت کا تماشائی ہے دیکھو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY