aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

جدائی حد سے بڑھی تو وصال ہو ہی گیا

عتیق الہ آبادی

جدائی حد سے بڑھی تو وصال ہو ہی گیا

عتیق الہ آبادی

MORE BYعتیق الہ آبادی

    جدائی حد سے بڑھی تو وصال ہو ہی گیا

    چلو وہ آج مرا ہم خیال ہو ہی گیا

    نوازتا تھا ہمیشہ وہ غم کی دولت سے

    اور اس خزانے سے میں مالا مال ہو ہی گیا

    میں آدمی ہوں تو ہمت نہ ٹوٹتی کیسے

    غموں کے بوجھ سے آخر نڈھال ہو ہی گیا

    یہ اور بات کہ وہ آدمی نہ بن پایا

    مگر زمانے کی خاطر مثال ہو ہی گیا

    وہ آفتاب کہ دن میں عروج تھا جس کا

    ہوئی جو شام تو اس کا زوال ہو ہی گیا

    میں کاروبار جہاں میں الجھ گیا اتنا

    کہ خود سے ملنا بھی اب تو محال ہو ہی گیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے