کیسا ماتم کیسا رونا مٹی کا

عارف شفیق

کیسا ماتم کیسا رونا مٹی کا

عارف شفیق

MORE BYعارف شفیق

    کیسا ماتم کیسا رونا مٹی کا

    ٹوٹ گیا ہے ایک کھلونا مٹی کا

    اتروں گا آفاق سے جب میں دھرتی پر

    بھر لوں گا دامن میں سونا مٹی کا

    اک دن مٹی اوڑھ کے مجھ کو سونا ہے

    کیا غم جو ہے آج بچھونا مٹی کا

    اونچا اڑنے کی خواہش میں تم عارفؔ

    ماؤں جیسا پیار نہ کھونا مٹی کا

    مأخذ :
    • کتاب : Monthly Adab-e-Latif (Pg. 118)
    • Author : Siddiqah Begum
    • مطبع : Aaftab Ahmed Chaudhry (2012)
    • اشاعت : 2012

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY