خود دل میں رہ کے آنکھ سے پردا کرے کوئی

اسرار الحق مجاز

خود دل میں رہ کے آنکھ سے پردا کرے کوئی

اسرار الحق مجاز

MORE BY اسرار الحق مجاز

    خود دل میں رہ کے آنکھ سے پردا کرے کوئی

    ہاں لطف جب ہے پا کے بھی ڈھونڈا کرے کوئی

    تم نے تو حکم ترک تمنا سنا دیا

    کس دل سے آہ ترک تمنا کرے کوئی

    دنیا لرز گئی دل حرماں نصیب کی

    اس طرح ساز عیش نہ چھیڑا کرے کوئی

    مجھ کو یہ آرزو وہ اٹھائیں نقاب خود

    ان کو یہ انتظار تقاضا کرے کوئی

    رنگینی نقاب میں گم ہو گئی نظر

    کیا بے حجابیوں کا تقاضا کرے کوئی

    یا تو کسی کو جرأت دیدار ہی نہ ہو

    یا پھر مری نگاہ سے دیکھا کرے کوئی

    ہوتی ہے اس میں حسن کی توہین اے مجازؔ

    اتنا نہ اہل عشق کو رسوا کرے کوئی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    خود دل میں رہ کے آنکھ سے پردا کرے کوئی نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites