کسی نے دیکھ لیا تھا جو ساتھ چلتے ہوئے

شہباز خواجہ

کسی نے دیکھ لیا تھا جو ساتھ چلتے ہوئے

شہباز خواجہ

MORE BYشہباز خواجہ

    کسی نے دیکھ لیا تھا جو ساتھ چلتے ہوئے

    پہنچ گئی ہے کہاں جانے بات چلتے ہوئے

    سفر سفر ہے کبھی رائیگاں نہیں ہوتا

    سر سحر چلی آئی ہے رات چلتے ہوئے

    سنا ہے تم بھی اسی دشت غم سے گزرے ہو

    سو ہم نے کی ہے بڑی احتیاط چلتے ہوئے

    ہم اپنی اکھڑی ہوئی سانسوں کو بحال کریں

    کہیں رکھے تو سہی کائنات چلتے ہوئے

    ہوا رکی تو عجب حسن تھا مگر شہبازؔ

    گرا گئی ہے کئی سوکھے پات چلتے ہوئے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY