کوئی منصب کوئی دستار نہیں چاہئے ہے

احمد کامران

کوئی منصب کوئی دستار نہیں چاہئے ہے

احمد کامران

MORE BY احمد کامران

    کوئی منصب کوئی دستار نہیں چاہئے ہے

    شاہزادی مجھے دربار نہیں چاہئے ہے

    آخری اشک سے اس سوگ کی تکمیل ہوئی

    اب مجھے کوئی عزا دار نہیں چاہئے ہے

    اس تکلف سے زیادہ کا طلب گار ہوں میں

    صرف یہ سایۂ دیوار نہیں چاہئے ہے

    اب مقابل مرے اپنے ہیں سو اے رب جلیل

    حوصلہ چاہئے تلوار نہیں چاہئے ہے

    چاہئے ہے مجھے انکار محبت مرے دوست

    لیکن اس میں ترا انکار نہیں چاہئے ہے

    آخر اعضا نے مرے ساتھ بغاوت کر دی

    اب قبیلے کو یہ سردار نہیں چاہئے ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY