میں تکیے پر ستارے بو رہا ہوں

اعتبار ساجد

میں تکیے پر ستارے بو رہا ہوں

اعتبار ساجد

MORE BYاعتبار ساجد

    میں تکیے پر ستارے بو رہا ہوں

    جنم دن ہے اکیلا رو رہا ہوں

    کسی نے جھانک کر دیکھا نہ دل میں

    کہ میں اندر سے کیسا ہو رہا ہوں

    جو دل پر داغ ہیں پچھلی رتوں کے

    انہیں اب آنسوؤں سے دھو رہا ہوں

    سبھی پرچھائیاں ہیں ساتھ لیکن

    بھری محفل میں تنہا ہو رہا ہوں

    مجھے ان نسبتوں سے کون سمجھا

    میں رشتے میں کسی کا جو رہا ہوں

    میں چونک اٹھتا ہوں اکثر بیٹھے بیٹھے

    کہ جیسے جاگتے میں سو رہا ہوں

    کسے پانے کی خواہش ہے کہ ساجدؔ

    میں رفتہ رفتہ خود کو کھو رہا ہوں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY