نہ ارماں لے کے آیا ہوں نہ حسرت لے کے آیا ہوں

نسیم شاہجہانپوری

نہ ارماں لے کے آیا ہوں نہ حسرت لے کے آیا ہوں

نسیم شاہجہانپوری

MORE BYنسیم شاہجہانپوری

    نہ ارماں لے کے آیا ہوں نہ حسرت لے کے آیا ہوں

    دل بیتاب میں تیری محبت لے کے آیا ہوں

    نگاہوں میں ترے جلووں کی کثرت لے کے آیا ہوں

    یہ عالم ہے کہ اک دنیائے حیرت لے کے آیا ہوں

    لبوں پر خامشی آنکھوں میں آنسو دل میں بیتابی

    میں ان کی بزم عشرت سے قیامت لے کے آیا ہوں

    سر محشر اگر پرسش ہوئی مجھ سے تو کہہ دوں گا

    سراپا جرم ہوں اشک ندامت لے کے آیا ہوں

    مٹا کر ہستئ ناکام کو راہ محبت میں

    زمانے کے لیے اک درس عبرت لے کے آیا ہوں

    تلاش ساحل مقصد جہاں بے سود ہوتی ہے

    میں ان موجوں میں اک پیغام راحت لے کے آیا ہوں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نہ ارماں لے کے آیا ہوں نہ حسرت لے کے آیا ہوں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY