نہ کوئی روک سکا خواب کے سفیروں کو

عادل منصوری

نہ کوئی روک سکا خواب کے سفیروں کو

عادل منصوری

MORE BYعادل منصوری

    نہ کوئی روک سکا خواب کے سفیروں کو

    اداس کر گئے نیندوں کے راہگیروں کو

    وہ موج بن کے اٹھی یاد کے سمندر سے

    تباہ کر گئی تنہائی کے جزیروں کو

    لرز کے ٹوٹ گئیں ہفت رنگ دیواریں

    ہوا چلی تو رہائی ملی اسیروں کو

    دفینے پاؤں تلے سے گزر گئے کتنے

    میں دیکھتا ہی رہا ہاتھ میں لکیروں کو

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    نہ کوئی روک سکا خواب کے سفیروں کو نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے