پرتو ساغر صہبا کیا تھا

اسرار الحق مجاز

پرتو ساغر صہبا کیا تھا

اسرار الحق مجاز

MORE BYاسرار الحق مجاز

    پرتو ساغر صہبا کیا تھا

    رات اک حشر سا برپا کیا تھا

    کیوں جوانی کی مجھے یاد آئی

    میں نے اک خواب سا دیکھا کیا تھا

    حسن کی آنکھ بھی نمناک ہوئی

    عشق کو آپ نے سمجھا کیا تھا

    عشق نے آنکھ جھکا لی ورنہ

    حسن اور حسن کا پردا کیا تھا

    کیوں مجازؔ آپ نے ساغر توڑا

    آج یہ شہر میں چرچا کیا تھا

    مآخذ
    • کتاب : Kulliyaat-e-Majaz (Pg. 220)

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY