قلب وارفتہ محبت میں کہیں ایسا نہ ہو

نسیم شاہجہانپوری

قلب وارفتہ محبت میں کہیں ایسا نہ ہو

نسیم شاہجہانپوری

MORE BYنسیم شاہجہانپوری

    قلب وارفتہ محبت میں کہیں ایسا نہ ہو

    جس کو تو اپنا سمجھتا ہے وہی بیگانہ ہو

    ہر ستم پر مسکرانا میری فطرت ہے مگر

    دیکھیے اس ضبط کا انجام کیا ہو کیا نہ ہو

    میں نے مانا آپ نے سب کچھ بھلا ڈالا مگر

    غیرممکن ہے کبھی میرا خیال آتا نہ ہو

    حسن کو یہ غم کہ جلوے ہو رہے ہیں بے نقاب

    عشق کو یہ فکر ناموس نظر رسوا نہ ہو

    شوق سے تو بھول جا اے بھولنے والے مگر

    اس تغافل میں کوئی پہلو توجہ کا نہ ہو

    گر گیا ان کی نگاہوں سے دل خانہ خراب

    میری نظروں سے بھی گر جائے کہیں ایسا نہ ہو

    بہر تکمیل نظارہ یہ بھی لازم ہے نسیمؔ

    میرے ان کے درمیاں حائل کوئی پردا نہ ہو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY