رہ گیا خواب دل آرام ادھورا کس کا

دل ایوبی

رہ گیا خواب دل آرام ادھورا کس کا

دل ایوبی

MORE BY دل ایوبی

    رہ گیا خواب دل آرام ادھورا کس کا

    ڈھل گئی شب تو کھلا ہے یہ دریچہ کس کا

    لمحہ لمحہ مجھے ویران کئے دیتا ہے

    بس گیا میرے تصور میں یہ چہرہ کس کا

    آزمائش کی گھڑی ہے سر مقتل دیکھیں

    زیر خنجر وہی رہتا ہے ارادہ کس کا

    یہ جو بیدار بھی ہیں سوئے ہوئے بھی ان میں

    شام کس کی ہے خدا جانے سویرا کس کا

    رہ رو آخر شب ہیں سبھی اکتائے ہوئے

    کون کب تک ہے یہاں ساتھ بھروسہ کس کا

    میرے قاتل کے تجسس میں بھٹکنے والو

    خون آلود ہے بستی میں پسینہ کس کا

    آئینہ خانہ دو عالم کو بنا کر اے دلؔ

    منتظر بیٹھا ہے وارفتہ و شیدا کس کا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY