روشنی کی یہ ہوس کیا کیا جلائے گی نہ پوچھ

ابھنندن پانڈے

روشنی کی یہ ہوس کیا کیا جلائے گی نہ پوچھ

ابھنندن پانڈے

MORE BYابھنندن پانڈے

    روشنی کی یہ ہوس کیا کیا جلائے گی نہ پوچھ

    آرزوئے صبح کتنے ظلم ڈھائے گی نہ پوچھ

    ہوش میں آئے گی دنیا میری بے ہوشی کے بعد

    میری خاموشی وہ ہنگامہ مچائے گی نہ پوچھ

    نسل آدم رفتہ رفتہ خود کو کر لے گی تباہ

    اتنی سختی سے قیامت پیش آئے گی نہ پوچھ

    درمیاں جو جسم کا پردہ ہے کیسے ہوگا چاک

    موت کس ترکیب سے ہم کو ملائے گی نہ پوچھ

    جسم اجازت دے ہی دے گا پر سمٹ جانے کے بعد

    روح کیسے اس قفس کو گھر بنائے گی نہ پوچھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY