سفر میں دھوپ تو ہوگی جو چل سکو تو چلو

ندا فاضلی

سفر میں دھوپ تو ہوگی جو چل سکو تو چلو

ندا فاضلی

MORE BY ندا فاضلی

    INTERESTING FACT

    وزیر اعظم نریندر مودی نے 9 مارچ 2016 کو راجیہ سبھا میں اس غزل کو اپنی تقریر کے دوران پڑھا

    سفر میں دھوپ تو ہوگی جو چل سکو تو چلو

    سبھی ہیں بھیڑ میں تم بھی نکل سکو تو چلو

    کسی کے واسطے راہیں کہاں بدلتی ہیں

    تم اپنے آپ کو خود ہی بدل سکو تو چلو

    یہاں کسی کو کوئی راستہ نہیں دیتا

    مجھے گرا کے اگر تم سنبھل سکو تو چلو

    کہیں نہیں کوئی سورج دھواں دھواں ہے فضا

    خود اپنے آپ سے باہر نکل سکو تو چلو

    یہی ہے زندگی کچھ خواب چند امیدیں

    انہیں کھلونوں سے تم بھی بہل سکو تو چلو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    چترا سنگھ

    چترا سنگھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY