شب کے پر ہول مناظر سے بچا لے مجھ کو

سلیم صدیقی

شب کے پر ہول مناظر سے بچا لے مجھ کو

سلیم صدیقی

MORE BYسلیم صدیقی

    شب کے پر ہول مناظر سے بچا لے مجھ کو

    میں تری نیند ہوں آنکھوں میں چھپا لے مجھ کو

    میں تری راہ مشیت کا ہوں ذرہ لیکن

    ڈھونڈھنے والا ستاروں میں کھنگالے مجھ کو

    خوف آنکھوں میں مری دیکھ کے چنگاری کا

    کر دیا رات نے سورج کے حوالے مجھ کو

    میں مصور ہوں برے وقت کی تصویروں کا

    راس آتے ہیں یہ دیوار کے جالے مجھ کو

    عمر بھر جس کے لئے پیٹ سے باندھے پتھر

    اب وہ گن گن کے کھلاتا ہے نوالے مجھ کو

    بیڑیاں ڈال کے پرچھائیں کی پیروں میں مرے

    قید رکھتے ہیں اندھیروں میں اجالے مجھ کو

    تیرے ہاتھوں کا تراشا ہوا پتھر ہوں سلیمؔ

    آئینہ ہو گئے سب دیکھنے والے مجھ کو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY