سوچ میں گم بے کراں پہنائیاں

سلیم احمد

سوچ میں گم بے کراں پہنائیاں

سلیم احمد

MORE BYسلیم احمد

    سوچ میں گم بے کراں پہنائیاں

    عشق ہے اور ہجر کی تنہائیاں

    رات کہتی ہے کہ کٹنے کی نہیں

    درد کہتا ہے کرم فرمائیاں

    بین کرتی ہے دریچوں میں ہوا

    رقص کرتی ہیں سیہ پرچھائیاں

    خامشی جیسے کوئی آہ طویل

    سسکیاں لیتی ہوئی تنہائیاں

    کون تو ہے کون میں کیسی وفا

    حاصل ہستی ہیں کچھ رسوائیاں

    یاد سے تیری سکوں یوں آ گیا

    صبح دم جیسے چلیں پروائیاں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY