اس کے دشمن ہیں بہت آدمی اچھا ہوگا

ندا فاضلی

اس کے دشمن ہیں بہت آدمی اچھا ہوگا

ندا فاضلی

MORE BY ندا فاضلی

    اس کے دشمن ہیں بہت آدمی اچھا ہوگا

    وہ بھی میری ہی طرح شہر میں تنہا ہوگا

    اتنا سچ بول کہ ہونٹوں کا تبسم نہ بجھے

    روشنی ختم نہ کر آگے اندھیرا ہوگا

    پیاس جس نہر سے ٹکرائی وہ بنجر نکلی

    جس کو پیچھے کہیں چھوڑ آئے وہ دریا ہوگا

    مرے بارے میں کوئی رائے تو ہوگی اس کی

    اس نے مجھ کو بھی کبھی توڑ کے دیکھا ہوگا

    ایک محفل میں کئی محفلیں ہوتی ہیں شریک

    جس کو بھی پاس سے دیکھو گے اکیلا ہوگا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    گھنشیام واسوانی

    گھنشیام واسوانی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY