aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

ورود جسم تھا جاں کا عذاب ہونے لگا

خالد کرار

ورود جسم تھا جاں کا عذاب ہونے لگا

خالد کرار

MORE BYخالد کرار

    ورود جسم تھا جاں کا عذاب ہونے لگا

    لہو میں اترا مگر زہر آب ہونے لگا

    کوئی تو آئے سنائے نوید تازہ مجھے

    اٹھو کہ حشر سے پہلے حساب ہونے لگا

    اسے شبہ ہے جھلس جائے گا وہ ساتھ مرے

    مجھے یہ خوف کہ میں آفتاب ہونے لگا

    پھر اس کے سامنے چپ کی کڑی لبوں پہ لگی

    مرا یہ منصب حرف آب آب ہونے لگا

    میں اپنے خول میں خوش بھی تھا مطمئن بھی تھا

    میں اپنی خاک سے نکلا خراب ہونے لگا

    ضرور مجھ سے زیادہ ہے اس میں کچھ خالدؔ

    مرا حریف اگر فتح یاب ہونے لگا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے