یہاں کسی کو بھی کچھ حسب آرزو نہ ملا

ظفر اقبال

یہاں کسی کو بھی کچھ حسب آرزو نہ ملا

ظفر اقبال

MORE BY ظفر اقبال

    یہاں کسی کو بھی کچھ حسب آرزو نہ ملا

    کسی کو ہم نہ ملے اور ہم کو تو نہ ملا

    غزال اشک سر صبح دوب مژگاں پر

    کب آنکھ اپنی کھلی اور لہو لہو نہ ملا

    چمکتے چاند بھی تھے شہر شب کے ایواں میں

    نگار غم سا مگر کوئی شمع رو نہ ملا

    انہی کی رمز چلی ہے گلی گلی میں یہاں

    جنہیں ادھر سے کبھی اذن گفتگو نہ ملا

    پھر آج مے کدۂ دل سے لوٹ آئے ہیں

    پھر آج ہم کو ٹھکانے کا ہم سبو نہ ملا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    یہاں کسی کو بھی کچھ حسب آرزو نہ ملا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY