یہ حسیں لوگ ہیں تو ان کی مروت پہ نہ جا

اعتبار ساجد

یہ حسیں لوگ ہیں تو ان کی مروت پہ نہ جا

اعتبار ساجد

MORE BYاعتبار ساجد

    یہ حسیں لوگ ہیں تو ان کی مروت پہ نہ جا

    خود ہی اٹھ بیٹھ کسی اذن و اجازت پہ نہ جا

    صورت شمع ترے سامنے روشن ہیں جو پھول

    ان کی کرنوں میں نہا ذوق سماعت پہ نہ جا

    دل سی چیک بک ہے ترے پاس تجھے کیا دھڑکا

    جی کو بھا جائے تو پھر چیز کی قیمت پہ نہ جا

    اتنا کم ظرف نہ بن اس کے بھی سینے میں ہے دل

    اس کا احساس بھی رکھ اپنی ہی راحت پہ نہ جا

    دیکھتا کیا ہے ٹھہر کر مری جانب ہر روز

    روزن در ہوں مری دید کی حیرت پہ نہ جا

    تیرے دل سوختہ بیٹھے ہیں سر بام ابھی

    بال کھولے ہوئے تاروں بھری اس چھت پہ نہ جا

    میری پوشاک تو پہچان نہیں ہے میری

    دل میں بھی جھانک مری ظاہری حالت پہ نہ جا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY