یونہی آتی نہیں ہوا مجھ میں

ادریس بابر

یونہی آتی نہیں ہوا مجھ میں

ادریس بابر

MORE BYادریس بابر

    یونہی آتی نہیں ہوا مجھ میں

    ابھی روشن ہے اک دیا مجھ میں

    وہ مجھے دیکھ کر خموش رہا

    اور اک شور مچ گیا مجھ میں

    دونوں آدم کے منتقم بیٹے

    اور ہوا ان کا سامنا مجھ میں

    میں مدینے کو لوٹ آیا ہوں

    یعنی جاری ہے کربلا مجھ میں

    روشنی آنے والے خواب کی ہے

    دن تو کب کا گزر چکا مجھ میں

    اس اندھیرے میں جب کوئی بھی نہ تھا

    مجھ سے گم ہو گیا خدا مجھ میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY